بس میں رش کی وجہ سے ایک آدمی درمیان میں کھڑا دھکے کھا رہا تھا۔ کبھی کسی کے دھکے

بس میں رش کی وجہ سے ایک آدمی درمیان میں کھڑا دھکے کھا رہا تھا۔ کبھی کسی کے دھکے سے آگے چلا جاتا اور کبھی پیچھے ۔جب وہ اترنے لگا تو کنڈیکٹر نے کہا : " صا حب ٹکٹ تو لے لیجئے "۔
اس آدمی نے کہا :" ٹکٹ کس خوشی میں لوں ۔
میں تو سارا راستہ پیدل چل کر آ یا ھوں "۔

رازٹیچر اپنی کلاس کے بچوں کو تازہ دم ہ

راز
ٹیچر اپنی کلاس کے بچوں کو تازہ دم ہونے کا مطلب سمجھانے کی کوشش کر رہی تھی ـانہوں‌نے نومی سے کہا ،" دیکھو تمھارے ڈیڈی دن بھر دفتر میں کام کرتے ہیں تو تھک جاتے ہیں ـ"
"جی ہاں‌مس ـ" نومی نے جواب دیا ـ
"تو پھر اس کے بعد وہ کیا کرتے ہیں ؟" ٹیچر نے پوچھا ـ
"مس ! یہی تو مما بھی جاننا چاہتی ہیں ـ" نومی نے الجھتے ہوئے جواب دیا

ایک خاتون کو اپنے شوہر پر بلاوجہ شک کرنے

ایک خاتون کو اپنے شوہر پر بلاوجہ شک کرنے کی عادت تھی جب بھی وہ دفتر سے یا پھر کسی جگہ سے واپس آتا تو اس کے کوٹ کو بڑی عرق ریزی سے چیک کرتی اگر ایک بال بھی نظر آجاتا تو پھر تو بے چارے شوہر کی شامت ہی آجاتی ۔ ایک دن شوہر دفتر سے گھر آیا ا س نے اس کے لباس کو پوری طرح چیک کیا لیکن کچھ بھی نظر نہ آیا ۔
اچھا ۔۔۔اس نے منہ بسورتے ہوئے کہا ’’اب تم نے گنجی عورتوں کے ساتھ بھی دوستی کرنی شروع کردی ہے ‘‘۔

"اگر تم کہو تو میں تمہارے لیے آسمان سے چاند تارے توڑ کر لا سکتا ہوں، تمہارے لیے

"اگر تم کہو تو میں تمہارے لیے آسمان سے چاند تارے توڑ کر لا سکتا ہوں، تمہارے لیے صحرا میں تپتی ریت پر لیٹ سکتا ہوں، گلے میں رسی ڈال کر خود کشی کر سکتا ہوں۔"
"تمہیں یہ سب کرنے کی ضرورت نہیں ہے، اگر تم مجھ سے سچی محبت کرتے ہو تو یوٹیلٹی سٹور سے آٹے کا تھیلا لا کر دکھا دو۔"