ایک نوجوان شاعر اپنی شاعری کی کتاب لے

ایک نوجوان شاعر اپنی شاعری کی کتاب لے کر پبلشر کےپاس چھپوانے کے لیے گیا۔
پبلشر نے پوچھا “کیا یہ ساری شاعری آپ کی ہے ؟“
“ بالکل جناب ۔ بلاشبہ میری ہے۔ کیا آپ اسے چھاپ دیں گے ؟“ نوجوان نے پوچھا
“مجھے افسوس ہے ۔ ہم اتنی غیرمعیاری شاعری نہیں چھاپ سکتے “ پبلشر نے کہا
“یا اللہ ! اب غالب کی غزلیں بھی غیر معیاری ہونے لگیں “ نوجوان نے بڑبڑاتے ہوئے کہا