ایک گجراتی خاندان اس وقت بہت پریشان ہو گ

ایک گجراتی خاندان اس وقت بہت پریشان ہو گیا جب انہیں امریکہ سے باء (دادی) کی معیت والا تابوت ملا۔

جب تابوت کھولا گیا تو معیت کے اوپر ایک خط پڑا ہوا تھا جس میں لکھا تھا۔

پیارے چندرکانت بھائی، ارویند بھائی، سمیتا بین اور ورشا۔

میں باء کی وصیت وخواہش کے مطابق اس کی لاش بھیج رہی ہوں کہ باء چاہتی تھی کہ اس کی آخری رسومات ہمارے اباؤ اجداد کے گھر میں ہو۔

میں اس لاش کے ساتھ اس لیے نہیں آ سکی کہ میری چھٹیاں ختم ہو چکی ہیں۔

باء کی لاش کے نیچے میں نے شہد کی بوتلیں، ٹوبر چاکلیٹ کے دس پیکٹ اور باداموں کے آٹھ پیکٹ رکھے ہیں ۔ آپ لوگ ان کو آپس میں بانٹ لیجیے گا۔

باء کے پیروں میں دی بک کے سائز دس کے جوتے ہیں جو میں نے موہن کے لیے بھیجے ہیں۔ اور اس کے ساتھ رادھا اور لکشمی کے بیٹوں کے لیے بھی جوتے رکھے ہیں امید ہے کہ ان کو پورا آئیں گے۔

باء نے چھ امریکن ٹی۔شرٹ پہن رکھی ہیں ایکسٹرا لارج والی موہن کے لیے ہے۔ باقی نارمل سائز والی آپ آپس میں بانٹ لیجئے گا۔

دو نئی جینز جو باء نے پہن رکھیں ہیں وہ چنٹو اور گنگو کے لیے ہے۔

ریما نے جو سوئس گھڑی مانگی تھی وہ باء کی بائیں کلائی میں ہے۔

Rate This Joke
No votes yet
Urdu-Jokes