بیوی کے ستائے ہوئے شوہر نے وکیل سے مشو

بیوی کے ستائے ہوئے شوہر نے وکیل سے مشورہ کیا۔اگر میں اپنی بیوی کو طلاق دوں تو کم از کم کتنا خرچ آئے گا۔ تین ہزار میری فیس. وکیل نے بتایا. تقریباً اتنی ہی رقم کورٹ فیس، اسٹیمپ، عدالتی کاغذ اور بیوی کا حق مہر اس کے علاوہ ہو گا،
شوہر نے جواب دیا. اتنا خرچ تو شادی میں بھی نہیں آیا تھا، سو روپے نکاح خواں نے لئے اورتین سو روپے میں نکاح کی مٹھائی آئی۔
وکیل نے مسکراتے ہو ئے. جناب. سستے کام کا یہی انجام ہوتا ہے۔

Rate This Joke
No votes yet