سکول کے لطیفے

warning: Creating default object from empty value in /home/freeurdujokes/public_html/modules/taxonomy/taxonomy.pages.inc on line 33.
اس سیکشن میں سکول سے متعلق لطیفے شامل ہیں۔

دو دوست صبح اسکول جارہے تھے۔ ایک دوست

دو دوست صبح اسکول جارہے تھے۔ ایک دوست دوسرے سے بولا۔ یہ سکہ ہے اسے اوپر کی طرف پھینکو اگر چاند پڑا تو چڑیا گھر چلیں گے۔ اگ پشت پڑی تو سرکس، اور اگر خدانخواستہ سیدھا کھڑا ہو گیا تو سکول چلے جائیں گے۔

بیٹا اسکول سے واپس آکر ماں سے بولا: ام

بیٹا اسکول سے واپس آکر ماں سے بولا: امی ! امی! دیکھئے تو میرے سر پر کیا ہے؟
ماں نے غور سے دیکھ کر کہا۔ سر پر تو صرف بال ہیںاور کچھ نہیں ہے۔
بیٹے نے کہا : امی ! ماسٹر صاحب کتنے جھوٹے ہیں ، کہہ رہے تھے ہمارے امتحان سر پر ہیں۔

بیٹا ﴿باپ سے﴾ ابو ! آج مجھے اسکول میں

بیٹا ﴿باپ سے﴾ ابو ! آج مجھے اسکول میں بہت سخت سزا ملی۔
باپ ﴿حیرت سے﴾ وہ کیوں؟
بیٹا : آج میں اسکول میں لیٹ گیا تھا۔
باپ:﴿ غصے سے ﴾ نالائق کہیں کے! میں تمہیں سکول پڑھنے کے لیے بھیجتا ہوں یا لیٹنے کے لیے۔

ایک لڑکی اسکول سے بہت غیرحاضر رہتی تھی

ایک لڑکی اسکول سے بہت غیرحاضر رہتی تھی ایک روز استانی صاحبہ نے اسے دیکھتے ہی پوچھا۔
اے الّو. کہاں رہتی ہو؟
لڑکی نے فوراً جواب دیا۔
’’اپنے گھونسلے میں‘‘

باپ ﴿بیٹے سے﴾ تم آج سکول سے بھاگ کر آئ

باپ ﴿بیٹے سے﴾ تم آج سکول سے بھاگ کر آئے ہو؟
بیٹا: نہیں ابو میں تو آہستہ آہستہ چل کر آیا ہوں۔

Syndicate content