صاحب ، ملازم کے لطیفے

warning: Creating default object from empty value in /home/freeurdujokes/public_html/modules/taxonomy/taxonomy.pages.inc on line 33.

ایک صاحب کو وقت معلوم کرنا تھا۔ او شبر

ایک صاحب کو وقت معلوم کرنا تھا۔ او شبراتی ، او شبراتی کہاں

مر گیا کم بخت۔
نوکر: آیا سرکار۔
صاحب:
ایک صاحب کو وقت معلوم کرنا تھا۔ او شبراتی ، او شبراتی کہاں

مر گیا کم بخت۔
نوکر: آیا سرکار۔
صاحب: دیکھو اس وقت کیا بج رہا ہے۔
نوکر : سرکار! اس وقت تو ریڈیو بج رہا ہے۔۔
نوکر : سرکار! اس وقت تو ریڈیو بج رہا ہے۔

مالک : آج کا اخبار کہاں ہےنوکر : ﴿پر

مالک : آج کا اخبار کہاں ہے
نوکر : ﴿پریشانی سے﴾ حضور کل سے ڈھونڈ رہا ہوں ملتا ہی

نہیں۔

مالک ﴿دیر سے آنے پر غصے ہو کر﴾ الو کہا

مالک ﴿دیر سے آنے پر غصے ہو کر﴾ الو کہاں رہتا ہے۔
نوکر : حضور! گھونسلے میں۔
مالک: گدھے۔
نوکر: حضور دھوبی کے ہاں۔
مالک بگڑ کر۔ بے وقوف ، نالائق
نوکر معصومیت سے حضور مجھے اس جانور کا پتہ نہیں ہے۔

مالک نوکر سے: مجھے پانچ بجے جگا دینا۔

مالک نوکر سے: مجھے پانچ بجے جگا دینا۔
نوکر : جناب پانچ تو بج چکے ہیں
مالک: تو میری شکل کیا دیکھ رہے ہو مجھے جگا دو۔

بھائی دنیا سے ایمانداری بالکل ختم ہو گ

بھائی دنیا سے ایمانداری بالکل ختم ہو گئی ہے۔ میرا نوکر چھ قمیضیں چرا کر بھاگ گیا۔
اچھا بہت مہنگی ہوں گی۔
معلوم نہیں۔ میں نے کل ہی ایک دکان سے اٹھائی تھیں۔

Syndicate content