لطیفے

warning: Creating default object from empty value in /home/freeurdujokes/public_html/modules/taxonomy/taxonomy.pages.inc on line 33.

ایک تقریب میں ایک خاتون غصّے سے بھری ہو

ایک تقریب میں ایک خاتون غصّے سے بھری ہوئی دوسرے خاتون کے پاس گئ اور بولی۔۔۔۔
خاتون:آپ کا بچّہ اتنا بدتمیز ہے میرے بیٹے کو مار رہا ہے۔۔۔

ڈاکٹر صاحب! پوسٹ مارٹم شروع کرنے سے پہل

ڈاکٹر صاحب! پوسٹ مارٹم شروع کرنے سے پہلے کیا آپ نے اس کی نبض دیکھی تھی؟ ملزم کے وکیل نے عدالت میں ڈاکٹر سے سوال کیا۔
نہیں، ڈاکٹر نے جواب دیا
کیا آپ نے اس کا بلڈ پریشر دیکھا تھا
نہیں

ایک بار ملا نصیر الدین کا گدھا مر

ایک بار ملا نصیر الدین کا گدھا مر گیا تو گاؤں کے شریر بچوں نے مذاق میں رونا شروع کردیا۔
گاؤں کے چودھری نے انہیں منع کیا تو ملا نصیر الدین نے کہا " انہیں رونے دیجئے۔ مرحوم ان کا بھائی تھا۔"

ایک دوست نے دوسرے دوست سے کہا۔ "سنا ہے

ایک دوست نے دوسرے دوست سے کہا۔ "سنا ہے تمہارے والد صاحب کو ڈاکٹروں نے جواب دے دیا"۔ وہ دوست ہکا بکا رہ گیا کہ یہ کیا کہہ رہا ہے جبکہ میرے والد صاحب تو بھلے چنگے ہیں۔ دوسرے دوست نے کہا تم یہ کیا بات ک

اچانک بڑی شدت کا طوفان بادوباراں آگیا۔ د

اچانک بڑی شدت کا طوفان بادوباراں آگیا۔ درخت جڑوں سے اکھڑنے لگے، گاڑیاں ایک دوسرے سے ٹکرا گئیں، مکانوں کی چھتیں اڑنے لگیں۔
ایک غائب دماغ پروفیسر یہاں وہاں بھاگ کر لوگوں کو جمع کر رہے تھے۔ وہ کہ رہے تھے "ہمیں اب یے سوچنا چاہئے کے ایسی حالت میں ہمیں کیا کرنا چاہئے؟"
ایک صاحب ان کو پکڑ کر ایک طرف لے گئے اور بولے۔ "سب سے پہلے گھر جا کر پتلون پہننی چاہئے۔"

Syndicate content