لڑکی کے لطیفے

  • warning: Creating default object from empty value in /home/freeurdujokes/public_html/modules/taxonomy/taxonomy.pages.inc on line 33.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:8a74a887d1c02d044e708f9b773531d3' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>نتیجے کے اعلان کے بعد</p>\n<p>پہلی لڑکی (روتے ہوئے): آں! پھر سے اکیانوے فیصد</p>\n<p>دوسری لڑکی(روتے ہوئے): تین بار دہرانے کے بعد بھی ترانوے فیصد</p>\n', created = 1490849485, expire = 1490935885, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:8a74a887d1c02d044e708f9b773531d3' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:ce328417fbf48c2c89c3c5b4bd3a96c5' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>لڑکیاں بھی عجیب ہوتیں ہیں<br />\nایک دفعہ ایک لڑکی آرٹ گیلری گئیں<br />\nایک جگہ دیکھ کر غصے سے مالک سے کہنے لگیں<br />\nاس بھیانک تصویر کو آپ آرٹ کہتے ہیں ؟<br />\nمالک نے معصومیت سے لڑکی کو دیکھ کر کہا ...</p>\n', created = 1490849485, expire = 1490935885, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:ce328417fbf48c2c89c3c5b4bd3a96c5' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:17aa35ee440413acb95fa52c6eed222a' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>دست شناس نے اس ہاتھ دیکھتے ہوئے۔<br />\nمس ناز صاحبہ! جلد ہی کوئی فلمساز، ڈائریکٹر یا ٹی وی </p>\n<p>پروڈیوسر آپ کو دیکھے گا اور پھر ایک ہی سال بعد آپ ملک کی </p>\n<p>سب سے نامور اور ہر دلعزیز ہیروئن بن جائیں گے۔<br />\nبھئی آپ بھی عجیب دست شناس ہیں سب ایک سی باتیں </p>\n<p>بتاتے ہیں ۔ کل میری سہیلی شمس اور پرسوں میری سہیلی </p>\n<p>چمکیلی کے ہاتھ دیکھ کر بھی آپ نے یہی پیشین گوئی کی </p>\n<p>تھی اور انہیں بھی مشہور ہیروئن بن جانے کی خوشخبری </p>\n<p>سنائی تھی۔<br />\nمیں مجبور ہوں مس ناز صاحبہ! آج کے دور کی کوئی بھی لڑکی </p>\n<p>اس سے کم درجے کی پیشین گوئی سننا نہیں چاہتی۔</p>\n', created = 1490849485, expire = 1490935885, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:17aa35ee440413acb95fa52c6eed222a' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:610ba56f2f6ad0a3288bc8ebd3703e21' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>وحیدہ . بھئی تم تو بڑی بدل گئی ہو۔ پہلے موٹی تھی اب دبلی </p>\n<p>ہو گئی ہو۔پہلے تمہارے بالوں کی رنگت سنہری تھی اب سیاہ ہو </p>\n<p>چکی ہے۔<br />\nپہلے تمہاری نظر بالکل ٹھیک تھی اب نظر کی کمزوری کی وجہ </p>\n<p>سے تم نے چشمہ لگا رکھا ہے<br />\nپہلے تم بھدی معلوم ہوتی تھیں اب خوبصورت نظر آ رہی ہو۔<br />\nدوسری لڑکی نے تعجب سے پہلی کو دیکھا۔ پھر بولی<br />\nمیرانام وحیدہ نہیں رخسانہ ہے۔<br />\nپہلی نے کہا :واہ بھئی واہ!<br />\nبڑی شریر ہو تم ، اپنا نام تک بدل چکی ہو۔</p>\n', created = 1490849485, expire = 1490935885, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:610ba56f2f6ad0a3288bc8ebd3703e21' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:15d2823ea4c81fb83753111fe1cdbf8d' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>ایک لڑکی اسکول سے بہت غیرحاضر رہتی تھی ایک روز استانی صاحبہ نے اسے دیکھتے ہی پوچھا۔<br />\nاے الّو. کہاں رہتی ہو؟<br />\nلڑکی نے فوراً جواب دیا۔<br />\n’’اپنے گھونسلے میں‘‘</p>\n', created = 1490849485, expire = 1490935885, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:15d2823ea4c81fb83753111fe1cdbf8d' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:15a4c373ca9426ce0f4beb79abf6d8a8' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:4c70e2cdcbf962ac4ec9fff9e46f9b05' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:0855055faa5769cc17f8af0af3872566' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:3daa926919d3ddaaf949282f224bbbbb' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
اس سیکشن میں لڑکی اور لڑکیوں سے متعلق لطائف شامل ہیں

نتیجے کے اعلان کے بعدپہلی لڑکی (روتے

نتیجے کے اعلان کے بعد

پہلی لڑکی (روتے ہوئے): آں! پھر سے اکیانوے فیصد

دوسری لڑکی(روتے ہوئے): تین بار دہرانے کے بعد بھی ترانوے فیصد

لڑکیاں بھی عجیب ہوتیں ہیںایک دفعہ ایک

لڑکیاں بھی عجیب ہوتیں ہیں
ایک دفعہ ایک لڑکی آرٹ گیلری گئیں
ایک جگہ دیکھ کر غصے سے مالک سے کہنے لگیں
اس بھیانک تصویر کو آپ آرٹ کہتے ہیں ؟
مالک نے معصومیت سے لڑکی کو دیکھ کر کہا ...

دست شناس نے اس ہاتھ دیکھتے ہوئے۔مس ن

دست شناس نے اس ہاتھ دیکھتے ہوئے۔
مس ناز صاحبہ! جلد ہی کوئی فلمساز، ڈائریکٹر یا ٹی وی

پروڈیوسر آپ کو دیکھے گا اور پھر ایک ہی سال بعد آپ ملک کی

سب سے نامور اور ہر دلعزیز ہیروئن بن جائیں گے۔
بھئی آپ بھی عجیب دست شناس ہیں سب ایک سی باتیں

بتاتے ہیں ۔ کل میری سہیلی شمس اور پرسوں میری سہیلی

چمکیلی کے ہاتھ دیکھ کر بھی آپ نے یہی پیشین گوئی کی

تھی اور انہیں بھی مشہور ہیروئن بن جانے کی خوشخبری

سنائی تھی۔
میں مجبور ہوں مس ناز صاحبہ! آج کے دور کی کوئی بھی لڑکی

اس سے کم درجے کی پیشین گوئی سننا نہیں چاہتی۔

وحیدہ . بھئی تم تو بڑی بدل گئی ہو۔ پہل

وحیدہ . بھئی تم تو بڑی بدل گئی ہو۔ پہلے موٹی تھی اب دبلی

ہو گئی ہو۔پہلے تمہارے بالوں کی رنگت سنہری تھی اب سیاہ ہو

چکی ہے۔
پہلے تمہاری نظر بالکل ٹھیک تھی اب نظر کی کمزوری کی وجہ

سے تم نے چشمہ لگا رکھا ہے
پہلے تم بھدی معلوم ہوتی تھیں اب خوبصورت نظر آ رہی ہو۔
دوسری لڑکی نے تعجب سے پہلی کو دیکھا۔ پھر بولی
میرانام وحیدہ نہیں رخسانہ ہے۔
پہلی نے کہا :واہ بھئی واہ!
بڑی شریر ہو تم ، اپنا نام تک بدل چکی ہو۔

ایک لڑکی اسکول سے بہت غیرحاضر رہتی تھی

ایک لڑکی اسکول سے بہت غیرحاضر رہتی تھی ایک روز استانی صاحبہ نے اسے دیکھتے ہی پوچھا۔
اے الّو. کہاں رہتی ہو؟
لڑکی نے فوراً جواب دیا۔
’’اپنے گھونسلے میں‘‘

Syndicate content