پٹھان کے لطیفے

  • warning: Creating default object from empty value in /home/freeurdujokes/public_html/modules/taxonomy/taxonomy.pages.inc on line 33.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:cc3cea17aedfd4f0a59bd6f85e116f02' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>پٹھان نیّا نیّا تبلیغ سے واپس آیا اور اپنی بیوی سےبحث کئی پھر اسکو مارنے لگا ۔<br />\nدوست نےپوچھا :<br />\nاُسے کیوں مار رہے ہو ؟<br />\nپٹھان بولا :<br />\nیہ داڑھی نہیں رکھتی :<br />\nدوست نے کہاکہ عورتوں کی تو داڑھی نہیں آتی :<br />\nپٹھان بولا :مجھے پتہ ہے مگر یہ \" اراداہ \" تو کرے</p>\n', created = 1490848815, expire = 1490935215, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:cc3cea17aedfd4f0a59bd6f85e116f02' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:0c1bcb4c18f4d992579ec108eb6414a4' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>ایک رات سخت بارش ہو رہی تھی۔ اچانک ایک پٹھان کا مکان گر </p>\n<p>گیا۔ وہ بیچارہ بہت پریشان ہوا۔ اچانک بارش نے طوفان کو روپ </p>\n<p>دھارا اور بجلی چمکنے لگی اور بادل زور زور سے گرجنے لگے۔ </p>\n<p>پٹھان پہلے ہی جلا بھنا بیٹھا تھا بول اٹھا۔ اب کیا رہ گیا ہے. </p>\n<p>خداوندا جو بیٹری کی روشنی میں ڈھونڈ رہا ہے۔</p>\n', created = 1490848815, expire = 1490935215, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:0c1bcb4c18f4d992579ec108eb6414a4' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:cb881aafa26a24cb1b1f06fe66215bfb' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>ایک پٹھان ریلوے لائن پر لیٹا ہوا تھا۔ ایک صاحب کا ادھر سے گزر ہوا۔ خان صاحب سے پوچھا کہ وہ لائن پر کیوں لیٹے ہوئے ہیں۔.ہم خودکشی کر ے گانہ . خان صاحب نے جواب دیا۔<br />\nلیکن یہ ناشتے دان کیوں ساتھ رکھا ہوا ہے؟ ان صاحب نے پوچھا۔<br />\nخوچہ گاڑی لیٹ آئی تو ہم تو بھوک سے مر جائے گا۔</p>\n', created = 1490848815, expire = 1490935215, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:cb881aafa26a24cb1b1f06fe66215bfb' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:bfe0cf80a069e9be57abf7683357de3c' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>دماغ کی بات ہو رہی تھی محفل میں ایک پٹھان بھی پیٹھا تھا، ایک شخص بولا، کل میں بازار گیا وہاں دماغ بک رہے تھے، سندھی کا دماغ دس ہزار کا، بلوچی کا دماغ بیس ہزار کا، پنجابی کا دماغ پچاس ہزار کا، پٹھان کا دماغ ایک لاکھ کا، یہ سن کر پٹھان بہت خوش ہوا، میں نے بیچنے والے سے پوچھا بھئی پٹھان کا دماغ کیوں اتنا مہنگا ہے تو اس نے کہا: بھئی پچاس پٹھان ماریں تو ایک سے دماغ نکلتا ہے۔ مدثر علی سراج: گجرات <a href=\"http://www.facebook.com/mudassarsaraj\" title=\"www.facebook.com/mudassarsaraj\">www.facebook.com/mudassarsaraj</a></p>\n', created = 1490848815, expire = 1490935215, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:bfe0cf80a069e9be57abf7683357de3c' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '1:13ead8c9c42bdd08b243c9464cd81b43' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: UPDATE cache_filter SET data = '<p>پٹھان نے ایک بچے کو اغوا کیا اور ایک چٹ پر لکھا کہ 50 لاکھ روپے کل صبح تک پل کے نیچے رکھ دو۔پھر یہ چٹ بچے پر چسپاں کر کے بچے کو گھر واپس بھیج دیا۔۔دوسرے روز پٹھان پل کے نیچے گیا تو وہاں 50 لاکھ روپےموجود تھے اور ساتھ ہی ایک چٹ تھی جس پر لکھا تھا۔۔۔ام کو پیسہ کا افسوس نہیں افسوس توبس یہ ہے کہ ایک پٹھان نے پٹھان کو لوٹا۔</p>\n', created = 1490848815, expire = 1490935215, headers = '', serialized = 0 WHERE cid = '1:13ead8c9c42bdd08b243c9464cd81b43' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 112.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:15a4c373ca9426ce0f4beb79abf6d8a8' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:4c70e2cdcbf962ac4ec9fff9e46f9b05' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:0855055faa5769cc17f8af0af3872566' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.
  • user warning: Table './freeurdujokes/cache_filter' is marked as crashed and should be repaired query: SELECT data, created, headers, expire, serialized FROM cache_filter WHERE cid = '2:3daa926919d3ddaaf949282f224bbbbb' in /home/freeurdujokes/public_html/includes/cache.inc on line 27.

پٹھان نیّا نیّا تبلیغ سے واپس آیا اور اپ

پٹھان نیّا نیّا تبلیغ سے واپس آیا اور اپنی بیوی سےبحث کئی پھر اسکو مارنے لگا ۔
دوست نےپوچھا :
اُسے کیوں مار رہے ہو ؟
پٹھان بولا :
یہ داڑھی نہیں رکھتی :
دوست نے کہاکہ عورتوں کی تو داڑھی نہیں آتی :
پٹھان بولا :مجھے پتہ ہے مگر یہ " اراداہ " تو کرے

ایک رات سخت بارش ہو رہی تھی۔ اچانک ایک

ایک رات سخت بارش ہو رہی تھی۔ اچانک ایک پٹھان کا مکان گر

گیا۔ وہ بیچارہ بہت پریشان ہوا۔ اچانک بارش نے طوفان کو روپ

دھارا اور بجلی چمکنے لگی اور بادل زور زور سے گرجنے لگے۔

پٹھان پہلے ہی جلا بھنا بیٹھا تھا بول اٹھا۔ اب کیا رہ گیا ہے.

خداوندا جو بیٹری کی روشنی میں ڈھونڈ رہا ہے۔

ایک پٹھان ریلوے لائن پر لیٹا ہوا تھا۔

ایک پٹھان ریلوے لائن پر لیٹا ہوا تھا۔ ایک صاحب کا ادھر سے گزر ہوا۔ خان صاحب سے پوچھا کہ وہ لائن پر کیوں لیٹے ہوئے ہیں۔.ہم خودکشی کر ے گانہ . خان صاحب نے جواب دیا۔
لیکن یہ ناشتے دان کیوں ساتھ رکھا ہوا ہے؟ ان صاحب نے پوچھا۔
خوچہ گاڑی لیٹ آئی تو ہم تو بھوک سے مر جائے گا۔

دماغ کی بات ہو رہی تھی محفل میں ایک پٹھا

دماغ کی بات ہو رہی تھی محفل میں ایک پٹھان بھی پیٹھا تھا، ایک شخص بولا، کل میں بازار گیا وہاں دماغ بک رہے تھے، سندھی کا دماغ دس ہزار کا، بلوچی کا دماغ بیس ہزار کا، پنجابی کا دماغ پچاس ہزار کا، پٹھان کا دماغ ایک لاکھ کا، یہ سن کر پٹھان بہت خوش ہوا، میں نے بیچنے والے سے پوچھا بھئی پٹھان کا دماغ کیوں اتنا مہنگا ہے تو اس نے کہا: بھئی پچاس پٹھان ماریں تو ایک سے دماغ نکلتا ہے۔ مدثر علی سراج: گجرات www.facebook.com/mudassarsaraj

پٹھان نے ایک بچے کو اغوا کیا اور ایک چٹ

پٹھان نے ایک بچے کو اغوا کیا اور ایک چٹ پر لکھا کہ 50 لاکھ روپے کل صبح تک پل کے نیچے رکھ دو۔پھر یہ چٹ بچے پر چسپاں کر کے بچے کو گھر واپس بھیج دیا۔۔دوسرے روز پٹھان پل کے نیچے گیا تو وہاں 50 لاکھ روپےموجود تھے اور ساتھ ہی ایک چٹ تھی جس پر لکھا تھا۔۔۔ام کو پیسہ کا افسوس نہیں افسوس توبس یہ ہے کہ ایک پٹھان نے پٹھان کو لوٹا۔

Syndicate content