پپو اور بلو آپس میں جھگڑ رہے تھے، مقدمہ

پپو اور بلو آپس میں جھگڑ رہے تھے، مقدمہ دادا جی کی عدالت میں پیش ہوا۔ جھگڑا ایک بلونگڑے (بلی کے بچے) پر تھا۔ شرط یہ تھی کہ جو بھی اچھا جھوٹ بولے گا، بلونگڑا اسی کو ملے گا۔
“ توبہ توبہ “ دادا جی کانوں کو ہاتھ لگاتے ہوئے بولے، مزید کہنے لگے “ میں جب تمہاری عمر کا تھا تو کبھی جھوٹ نہیں بولتا تھا۔“
یہ سن کر پپو بولا “ بلو بلونگڑا دادا جی کو دے دو۔“