کسی بادشاہ کے دور میں ایک میراثی کو موت

کسی بادشاہ کے دور میں ایک میراثی کو موت کی سزا ھو گئی۔ مقررہ دن جب میراثی کو سرقلم کرنے کے لئے لایا جا رھا تھا تو بادشاہ نے جلاد سے کہا کہ تلوار لاو اس کا سر میں خود قلم کروں گا
اس پر میراثی نے بادشاہ کی طرف دیکھ کر کہا، لگتا تو نہیں پر شائد
بادشاہ نے سن لیا پر خاموش رھا
جب بادشاہ میراثی کے قریب پہنچا تو میراثی نے پھر بادشاہ کی طرف دیکھا اور کہا، لگتا تو نہیں پر شائد
بادشاہ سن کر پھر خاموش رھا
جب میراثی گردن جھکانے لگا تاکہ سر قلم کیا جاسکے تو میراثی نے بادشاہ کی طرف دیکھ کر پھر کہا، لگتا تو نہیں پر شائد
اب کی بار بادشاہ کو تشویش ھوئی اس نے میراثی سے پوچھا کہ تو نے تین دفعہ میری طرف دیکھ کر کہا کہ لگتا تو نہیں پر شائد ۔ اس کا کیا مطلب ھے
میراثی نے یہ سن کر کہا بادشاہ سلامت مار تو اپ نے مجھے دینا ھی ھے تو سنیں
بات اصل میں یہ ھے کہ میرا باپ ایک نجومی تھا مرنے سے پہلے اس نے میرا ھاتھ دیکھ کر کہا تھا کہ تیری موت ایک کتے کے ھاتھوں ھو گی میں اس لئے اپ کی طرف دیکھ کر کہہ رھا تھا کہ لگتا تو نہیں پر شائد

Share this