ایک آدمی جس کے دونوں کان جلے ہوئے تھے ڈا

ایک آدمی جس کے دونوں کان جلے ہوئے تھے ڈاکٹر کے پاس آیا، ڈاکٹر نے پوچھا یہ کیسے ہوا، وہ کہنے لگا میں کپڑے استری کر رہا تھا کہ فون کی گھنٹی بجی، عجلت میں میں نے استری کان کو لگا لی۔
لیکن آپ کے تو دونوں کان جلے ہوئے ہیں ؟ ڈاکٹر نے کہا
جی ہاں جیسے ہی میں نے استری نیچے رکھی، فون کی گھنٹی دوبارہ بج اٹھی۔

One Day, The Wife Comes Home With A Spec

One Day, The Wife Comes Home With A Spectacular Diamond Ring. "Where Did You Get That Ring? " Her Husband Asks. "Well, She Replies, "My Boss And I Played The Lotto And We Won, So I Bought It With My Share Of The Winnings. A Week Later, His Wife Comes Home With A Long Shiny Fur Coat. "Where Did You Get That Coat? " Her Husband Asks. She Replies "My Boss And Played The Lotto And We Won Again, So I Bought It With My Share Of The Winnings. Another Week Later, His Wife Comes Home, Driving In A Red Ferrari. "Where Did You Get That Car? " Her Husband Asks. Again She Repeats The Same Story About The Lotto And Her Share Of The Winnings. That Night, His Wife Asks Him To Pour Her A Nice Warm Bath While She Gets Undressed. When She Enters The Bathroom, She Find That There Is Barely Enough Water In The Bath To Cover The Plug At The Far End. "And This? " She Asks Her Husband. " Well, " He Replies, "We Dont Want To Get Your Lotto Ticket Wet, Do We? !"

گلفام اچھی بھلی زندگی گزار رہا تھا۔اُوبچی نوکری،ٹھیک ٹھاک تنخواہ،باپ کی چھوڑی ہو

گلفام اچھی بھلی زندگی گزار رہا تھا۔اُوبچی نوکری،ٹھیک ٹھاک تنخواہ،باپ کی چھوڑی ہوئی لمبی چوڑی جائیداد،ہر وقت موج میلہ کرتا رہتا،ایک دن وہ اپنے دفتر میں بیٹھا کام کر رہا تھا کہ اچانک آواز آئی:
گلفام ۔ ۔ ۔نوکری چھوڑ،گھر جا،جائیداد بیچ،پیسے اکٹھے کر اور امریکہ جا
گلفام نے ادھر اُدھر دیکھا،اُسے کوئی شخص نظر نہ آیا،اس نے اپنا وہم سمجھ کر نظر انداز کر دیا
دوسرے دن وہ کار میں جا رہا تھا کہ پھر آواز آئی:
گلفام ۔ ۔ ۔نوکری چھوڑ،گھر جا،جائیداد بیچ،پیسے اکٹھے کر اور امریکہ جا
اُسنے پھر اس کو اپنا وہم سمجھا لیکن اسکے بعد اُسے اُٹھتے بیٹھتے،گھر میں ،دفتر میں،کار میں ۔ ۔ ۔ ۔ ہر جگہ یہ آواز بار بار سنائی دینے لگی
تین چار مہینے تک یہ آواز بار بار سننے کے بعد گلفام نے اسے ''غیبی اشارہ ''سمجھا
اسنے نوکری چھوڑی،گاڑی ،گھر،جائیداد،ہر چیز بیچی،پیسے ساتھ لیے،جہاز پر بیٹھا اور امریکہ پہنچ گیا ابھی وہ ایئر پورٹ پر ہی تھا کہ اُسے وہ آواز دوبارہ سنائی دی:
گلفام ۔ ۔ ۔ ۔جلدی کر ،ٹیکسی لے اور جوئے خانے پہنچ جا
اُس نے غیبی آواز کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئے ٹیکسی لی اور سب سے بڑے جوئے خانے پہنچ گیا اندر داخل ہوا تو آواز آئی:
پندرہ نمبر ٹیبل پر پہنچو ۔ ۔ ۔ جلدی جلدی
وہ فوراً پندرہ نمبر میز پر پہنچا،جوا کھلانے والا پہیہ گھمانے والا تھا ،غیبی آواز آئی:
سارے پیسے نو نمبر پر لگا دو
گلفام نے ساری کمائی نو نمبر پر لگا دی پہیہ گھوما اور سوئی آہستہ آہستہ آٹھ نمبر پر آکر رک گئی
گلفام اپنا سب کچھ ہار گیا ،عین اُسی وقت آواز آئی:
بس تو ایک نمبر سے مار کھا گیا گلفام ۔ ۔ ۔

امریکی اداکارہ ڈورس ڈے جب جوان تھی تو ای

امریکی اداکارہ ڈورس ڈے جب جوان تھی تو ایک بیکری میں ملازمت کیا کرتی تھی
ایک روز ایک دس سالہ بچہ وہاں آیا اور پیسٹری خرید کر کھانے لگا
ایک کھانے کی بعد اسے دوسری کی طلب تھی لیکن پیسے نہیں تھے
اس نے ڈورس سے کہا آپ مجھ سے شادی کریں گی اس نے کہا جب آپ بڑے ہو جاؤگے تو یقینا کروں گی
بچہ بولا : تو کیا آپ اپنے ہونے والے شوہر کو ایک پیسٹری بھی نہیں کھلا سکو

ایک دفعہ بچہ باہر کھیل رہا تھا کہ بھاگتے

ایک دفعہ بچہ باہر کھیل رہا تھا کہ بھاگتے بھاگتے گھر آیا اور اپنی مان سے بولا:
”امان اماں ابا جی کو کچھ ہو گیا ہے‘‘
ماں نے کہا :”کوئی بات نہیں باہر جا کر کھیل‘‘
بچہ پھر بھاگا بھاگا آیا اور بولا:”ماں مرغی کو کتا کھا گیا"
ماں رونے پیٹنے لگی
بچہ حیران ہوتے ہوئے بولا:”ماں جب ابا مرا تو تجھ کچھ نہ ہوا لیکن جب مرغی مری تو ۔ ۔ ۔ ۔‘‘
ماں بولی:”مرغی تو انڈا دیتی تھی تیرا ابا کیا دیتا تھا‘‘