ایک دفعہ ایک عربی کا اکسیڈینٹ ہوا تو کسی شیخ نے عربی کو خون دیا۔جس سے عربی کی جا

ایک دفعہ ایک عربی کا اکسیڈینٹ ہوا تو کسی شیخ نے عربی کو خون دیا۔جس سے عربی کی جان بچ گئی۔
عربی نےخوش ہو کر شیخ صاحب کو مرسڈیز دی۔
اگلی بار پھر ایساہی ہوا شیخ صاحب نے پھر خون دیا
اس بار عربی نے شیخ صاحب کو تل کے لڈو دئے
شیخ صاحب نے پوچھا پہلی بار مرسڈیز اور اس بار تل کے لڈؤ
عربی نے جواب دیا کیونکہ اب مجھ میں شیخوں
کا خون دوڑ رہا ہے

ساس نے اپنی بہو سے کہا“ آج تو بہت رات

ساس نے اپنی بہو سے کہا
“ آج تو بہت رات ہوگئی ـ تمہارا شوہر ابھی تک نہیں آیا ـ لگتا ہے وہ کسی دوسری عورت کے پاس چلا گیا ہے ۔“
بہو نے جواب دیا ،“ اماں ! کبھی تو اچھی بات کرلیا کرو۔ یہ بھی تو ہو سکتاہے کہ وہ کسی ٹرک کے نیچے آکر مرکھپ گیا ہو ۔“