ایک ڈآکٹر کسی خاتون کے کوائف لکھ رہا تھا

ایک ڈآکٹر کسی خاتون کے کوائف لکھ رہا تھا۔۔: اچھا تو آپ کو چلنے میں بھی تکلیف ہے ،آپ کا سانس بھی جلد پھول جاتا ہے ، بھلا آپ کی عمر کیا ہے ؟ ڈاکٹر نے قلم روک کر پوچھا
میں اگلے برس تیس سال کی ہو جاؤں گی "مریضہ نے جواب دیا
حافظہ بھی کمزور ہے : ڈاکٹر نے لکھا :

کاتب اور خطاط ہوں اپنی فیلڈ کا ہی لطیفہ

کاتب اور خطاط ہوں اپنی فیلڈ کا ہی لطیفہ سناوں گا
کسی جگہ پڑھا تھا کہ ایک شخص نے مشہور مصور پکاسو کی زندگی پر ایک کتاب لکھی۔ اور کاتب کو دے دی۔ کاتب نے دوران کتابت اپنے علم کو بھی پس پشت نہ رکھا اور جب کتابت مکمل ہوئی تو لکھنے والے نے دیکھا کہ ہر جگہ جہا ں پکاسو کا نام تھا ایک ایک "رے" کا اضافہ تھا۔اور یوں‌لفظ بنتا تھا۔ "پکا سور" `
جب اس نے کاتب سے پوچھا کہ ایسا کیوں کیا تو کاتب نےجواب دیا میں نےسمجھا کہ "رے " ڈالنی آپ سے رہ گئی ہوگی شاید۔ واہ پکاسو کو پکا سور لکھ دیا۔