Judge Jokes

warning: Creating default object from empty value in /home/freeurdujokes/public_html/modules/taxonomy/taxonomy.pages.inc on line 33.

جج نے ملزم سے کہا، " تم اعتراف کرتے ہو

جج نے ملزم سے کہا، " تم اعتراف کرتے ہو کہ تم نے سات بار اس دوکان کا تالا توڑ کر چوری کی۔ یہ بتاو تم نے کیا کچھ چرایا"
"حضور اپنی بیوی کے لئے صرف ایک ساڑھی" ملزم نے جواب دیا۔
"صرف ایک ساڑھی کے لئے تم نے سات بار قفل شکنی کی؟"
"جی ہاں حضور،" ملزم نے جواب دیا، " میں پہلے جو چھ ساڑھیاں لایا تھا وہ میری بیوی کو پسند نہیں آئں۔"

جج :لگتا ہے تم نے اپنی حدود سے تجاوز کیا ہےملزم:کون سالا ایسا کہتا ہےجج:یہ

جج :لگتا ہے تم نے اپنی حدود سے تجاوز کیا ہے
ملزم:کون سالا ایسا کہتا ہے
جج:یہ کیا بدتمیزی ہے
ملزم:میں پوچھ رہا ہوں کہ کونسا ‘‘لا‘‘ایسا کہتا ہے

ملزم:وکیل صاحب، کوشش کیجیئے گا زیادہ سے زیادہ عمر قید ہو،مجھے پھانسی سے بہ

ملزم:
وکیل صاحب، کوشش کیجیئے گا زیادہ سے زیادہ عمر قید ہو،
مجھے پھانسی سے بہت ڈر لگتا ہے۔ ۔ ۔

وکیل:
ٹھیک ہے میں پوری کوشش کروں گا۔ ۔ ۔

فیصلے کے بعد ملزم:
وکیل صاحب کیا بنا؟

وکیل:
بڑی مشکل سے عمر قید کروائی ہے،

ورنہ عدالت تو رہا کر رہی تھی۔ ۔

جج: تم نے اس آدمی سے رقم کیوں چھینیملزم: جناب میں نے چھینی نہیں اس نے خود مجھے

جج: تم نے اس آدمی سے رقم کیوں چھینی
ملزم: جناب میں نے چھینی نہیں اس نے خود مجھے دی تھی
جج: اس نے تمہیں رقم کب دی تھی
ملزم: جب میں نے اسے بندوق دکھائی تھی

جج :ملزم سے تم دن میں کتنی بار جیب کاٹتے ہو؟ملزم:بیس تیس مرتبہجج:اور پھر بھی

جج :ملزم سے تم دن میں کتنی بار جیب کاٹتے ہو؟
ملزم:بیس تیس مرتبہ
جج:اور پھر بھی تم یہی کہتے ہو تم جیب تراش نہیں ہو؟
ملزم :جی ہاں! میں مجرم نہیں بلکہ ایک درزی ہوں

Syndicate content