Judge Jokes

وجہ؛سچ سچ بتاؤ تم نے اپنی بیوی پر کس و

وجہ؛
سچ سچ بتاؤ تم نے اپنی بیوی پر کس وجہ سے ہاتھ اٹھایا تھا؟ جج نے ملزم سے پوچھا۔
تین باتوں کی وجہ سے جناب؛ ملزم نے جواب دیا۔ ”پہلی وجہ یہ تھی اسکی پیٹھ میری طرف تھی۔ دوسری وجہ یہ تھی کہ بیلن اسکے ہاتھ میں نہیں تھا ۔ ہیں جی، اور تیسری بڑی وجہ یہ تھی کہ میرے بھاگنے کیلئے دروازہ کھلا تھا“

جج (مجرم سے) :”میں نے پہلے بھی تمھیں کئی بار ملزم کی حیثیت سے عدالت میں دیکھا ہے

جج (مجرم سے) :”میں نے پہلے بھی تمھیں کئی بار ملزم کی حیثیت سے عدالت میں دیکھا ہے“۔
مجرم:”یہ جناب کی قدردانی ہے ورنہ اس زمانے میں کون کسی کو یاد رکھتا ہے“۔

شاعر اور چورکنور مہندر سنگھ بیدی جن د

شاعر اور چور
کنور مہندر سنگھ بیدی جن دنوں دہلی کے مجسڑیٹ تھے، ان کی عدالت میں چوری کے جرم میں گرفتار کئے گئے ایک نوجوان کو پیش کیا گیا۔
کنور صاحب نے نوجوان کی شکل دیکتھے ہوئے کہا۔
"میں ملزم کو ذاتی طور ہر جانتا ہوں، ہتھکڑیاں کھول دو، یہ بیچارہ تو ایک شاعر ہے، شعر چرانے کے علاوہ کوئی اور چوری کرنا اسکے بس کا روگ نہیں۔"

کنور مہندر سنگھ بیدی صاحب جن دنوں دیلی

کنور مہندر سنگھ بیدی صاحب جن دنوں دیلی کے مجسڑیٹ تھے، ان کی عدالت میں چوری کے جرم میں گرفتار کئے گئے ایک نوجوان کو پیش کیا گیا۔
کنور صاحب نے نوجوان کی شکل دیکتھے ہوئے کہا۔
میں ملزم کو ذاتی طور ہر جانتا ہوں، ہتھکڑیاں کھول دو، یہ بیچارہ تو ایک شاعر ہے۔ شعر چرانے کے علاوہ کوئی اور چوری کرنا اسکے بس کا روگ نہیں۔