Urdu Jokes

Welcome To Urdu Jokes Section Of Free Urdu Jokes. In This Entertainment Section You Can Read 10,000 <b>Urdu Jokes</b>. This Is Not A Joke My Dear. Yes Ten Thousand Urdu Jokes. This Is The Largest Collection Of Urdu Jokes On The Planet. You Can Read Interesting Jokes For Countless Hours But You Can't Finish Then All Because We Are Adding More Jokes. And If That Is Not Enough We Are Adding Hundreds Of New Urdu Jokes Every Day. Hope You Like Our Efforts In Collecting Fresh Urdu Jokes. Keep Smiling And Tell Your Friends About Free Urdu Jokes. Please Do Remeber To Add One Joke Because A Joke A Day, Keeps The Sorrow Away...

ایک آدمی بلی کو نہلا رہا تھا اس کے پاس

ایک آدمی بلی کو نہلا رہا تھا اس کے پاس سے ایک شخص گزرا اس نے پوچھا۔
بھئی بلی کو نہ نہلاؤ مر جائے گی۔
کچھ دیر بعد وہ شخص واپس آیا تو دیکھا بلی مری پڑی ہے وہ شخص بولا۔
میں نے کہا تھا کہ بلی مر جائے گی
اس نے جواب دیا۔
نہلانے سے تھوڑی مری ہے
بلی تو نچوڑنے سے مری ہے

منیجر : خان صاحب آپ نے بیس روٹیاں کھائی ہیں۔خان صاحب : نہیں برادر ہم نے انیس

منیجر : خان صاحب آپ نے بیس روٹیاں کھائی ہیں۔
خان صاحب : نہیں برادر ہم نے انیس روٹیاں کھایا ہے۔
منیجر بضد رہا تو خان صاحب نے تنگ آ کر کہا۔
خوچہ ہم انیس بیس نہیں جانتا۔ اب ہم پھر سے کھانا شروع کرتے ہیں تم گنتے جانا۔

ایک پٹھان ریلوے لائن پر لیٹا ہوا تھا۔

ایک پٹھان ریلوے لائن پر لیٹا ہوا تھا۔ ایک صاحب کا ادھر سے گزر ہوا۔ خان صاحب سے پوچھا کہ وہ لائن پر کیوں لیٹے ہوئے ہیں۔.ہم خودکشی کر ے گانہ . خان صاحب نے جواب دیا۔
لیکن یہ ناشتے دان کیوں ساتھ رکھا ہوا ہے؟ ان صاحب نے پوچھا۔
خوچہ گاڑی لیٹ آئی تو ہم تو بھوک سے مر جائے گا۔

ملازم : حضور موچی تقاضا کر رہا ہے کہ جوتے مرمت کرنے کی اجرت ادا کریں۔مالک: ا

ملازم : حضور موچی تقاضا کر رہا ہے کہ جوتے مرمت کرنے کی اجرت ادا کریں۔
مالک: اسے کہو کہ اپنی باری کا انتظار کرے ابھی تو دکاندار کو بھی پیسے نہیں دئیے جس سے جوتا خریدا ہے۔

استا د نے اپنے شاگرد سے کہا کہ کوئی ایسا جملہ بناؤ جس میں ماضی حال اور مستقبل

استا د نے اپنے شاگرد سے کہا کہ کوئی ایسا جملہ بناؤ جس میں ماضی حال اور مستقبل کا استعمال کیا گیا ہو۔
شاگرد نے فوراً گا کر جواب دیا
مجھے تم سے پیار تھا سو سال پہلے
آج بھی ہے اور کل بھی رہے گا۔

ایک یہودی دوسرے یہودی سے ملا تو اس نے پوچھا۔کدھر جار ہے ہوکنگھی خریدنے جا

ایک یہودی دوسرے یہودی سے ملا تو اس نے پوچھا۔
کدھر جار ہے ہو
کنگھی خریدنے جا رہا ہوں
لیکن ابھی پانچ سال پہلے تو تم نے کنگھی خریدی تھی۔ پھر اتنی جلدی دراصل اس کا ایک دندانہ ٹوٹ گیا۔
صرف ایک دندانہ ٹونے سے نئی کنگھی۔
وہ اس کا آخری دندانہ تھا۔

ایک گنجے کی ایک آدمی سے لڑائی ہو گئی۔ لڑتے لڑتے گنجے نے کہا۔ تم تو میرے سر پر

ایک گنجے کی ایک آدمی سے لڑائی ہو گئی۔ لڑتے لڑتے گنجے نے کہا۔ تم تو میرے سر پر چڑھے جا رہے ہو۔
دوسرا آدمی بولا۔ چھوڑو یار تمہارے سر پر چڑھ کر مجھے پھسلنا ہے۔

آدھی رات کو کسی نے فون کیا۔ اس نے جھنجھلا کر ریسیور اٹھایا دوسری طر ف سے آواز

آدھی رات کو کسی نے فون کیا۔ اس نے جھنجھلا کر ریسیور اٹھایا دوسری طر ف سے آواز آئی۔
کہاں سے بول رہے ہوَ
جہنم سے۔ اس آدمی نے غصے سے جواب دیا۔
آواز آئی ہاں یہی معلوم کرنے کے لیے ٹیلی فون کیا تھا کہ ایسا بددماغ آدمی جنت میں تو نہیں پہنچ گیا۔