Urdu Jokes

Welcome To Urdu Jokes Section Of Free Urdu Jokes. In This Entertainment Section You Can Read 10,000 <b>Urdu Jokes</b>. This Is Not A Joke My Dear. Yes Ten Thousand Urdu Jokes. This Is The Largest Collection Of Urdu Jokes On The Planet. You Can Read Interesting Jokes For Countless Hours But You Can't Finish Then All Because We Are Adding More Jokes. And If That Is Not Enough We Are Adding Hundreds Of New Urdu Jokes Every Day. Hope You Like Our Efforts In Collecting Fresh Urdu Jokes. Keep Smiling And Tell Your Friends About Free Urdu Jokes. Please Do Remeber To Add One Joke Because A Joke A Day, Keeps The Sorrow Away...

جیل میں ایک مجرم نے دوسرے سے پوچھا تمہیں کس جرم کی سزا مل رہی ہے۔حکومت سے

جیل میں ایک مجرم نے دوسرے سے پوچھا
تمہیں کس جرم کی سزا مل رہی ہے۔
حکومت سے میری ضد چل رہی تھی
کیا مطلب.؟ کیا تم کوئی لیڈر ہو پہلے قیدی نے حیرت سے پوچھا۔
نہیں . حکومت کو یہ بات پسند نہیں تھی کہ میں اس کی طرح کرنسی نوٹ چھاپوں۔

سڑک کے کنارے ایک فقیر بیٹھا ہوا تھا اس

سڑک کے کنارے ایک فقیر بیٹھا ہوا تھا اس کے پاس کار آ کر رکی اس میں سے ایک آدمی اترا اور فقیر سے بولا۔
کیا تم جوا کھیلتے ہو؟۔
فقیر نہیں
کیا شراب پیتے ہو؟
نہیں جناب
کیا کلب جاتے ہو؟
نہیں
رات کو گھر دیر سے جاتے ہو
نہیں حضور. فقیر نے گھبرا کر جواب دیا۔
اچھا تو پھر میرے ساتھ گھر چلو میں اپنی بیگم کو بتانا چاہتا ہوں جو لوگ یہ سب کام نہیں کرتے ان کی حالت کیا ہوتی ہے۔

ریگستان سے ایک قافلہ گزر رہا تھا کہ قافلہ سالار نے دیکھا دور ایک آدمی مدد کے ل

ریگستان سے ایک قافلہ گزر رہا تھا کہ قافلہ سالار نے دیکھا دور ایک آدمی مدد کے لیے ہاتھ ہلا رہا ہے۔ اس نے قافلہ کا رخ اس کی طرف موڑ دیا۔ قریب جا کر دیکھا ایک نکھٹو لڑکا چارپائی پر لیٹا ہوا تھا اور اسے اشارے سے کہہ رہا تھا میرے سینے پر سے یہ کھجور اٹھا کر میرے منہ میں ڈال دو۔ یہ سن کر قافلہ سالار کو بہت غصہ آیا۔ اس نے اس کے باپ سے شکایت کی تو اس نے کہا ہاں جی یہ بہت سست ہے کل گائے کے بچھڑے نے میرا کان چبا ڈالا مگر اس نے اسے نہ روکا۔

ایک نوعمر لڑکا باغ میں درخت پر چڑھا پھل توڑ رہا تھا اتنے میں مالی آ گیا۔ بولا

ایک نوعمر لڑکا باغ میں درخت پر چڑھا پھل توڑ رہا تھا اتنے میں مالی آ گیا۔ بولا میں تیرے باپ سے شکایت کروں گا۔
لڑکے نے جواب دیا مگر وہ تو ساتھ والے درخت پر سے پھل توڑ رہے ہیں۔

ایک دفعہ کسی دعوت میں ایک امیر عورت کا

ایک دفعہ کسی دعوت میں ایک امیر عورت کا ہار چوری ہوگیا۔ اس نے میزبان سے شکایت کی۔ میزبان نے اعلان کروا دیا کہ ان خاتون کا ہار چوری ہو گیا ہے ہم ایک پیالہ میز پر رکھ رہے ہیں جس صاحب کے پاس وہ ہار ہو وہ اس پیالے میں رکھ دیں۔ یہ کہہ کر لائٹ بھی بند کر دئی۔ جب لائٹ کھولی گئی تو وہ پیالہ ایک خاتون کی گھڑی اور تمام تحائف غائب تھے۔

ایک خبط الحواس پروفیسر صاحب کا دور کا

ایک خبط الحواس پروفیسر صاحب کا دور کا عزیز فوت ہو گیا۔ وہ پروفیسر تعزیت کے لیے اس کے گھر پہنچے۔ تعزیت کے الفاظ انہوں نے یہ ادا کیے کتنی خوشی کی بات ہے کہ آج کی نشست میں آپ سب نے . ایک شخص نے انہیں کہنی ماری اور بتایا کہ یہاں سب لوگ تعزیت کے لیے آئے ہیں۔
پروفیسر صاحب نے کہنا شروع کیا۔
مجھے ابھی ابھی بتایا گیا ہے کہ آج کا یہ مجمع رنج و غم کا اظہار کرنے کے لیے مخصوص ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ میں نے آج تک اتنا خاموش اور پرسکون مجمع زندگی میں نہیں دیکھا۔ میں دل کی گہرائیوں سے منتظمین کو اس کامیابی پر مبارکباد پیش کرتا ہوں اور توقع کرتا ہوں کہ وہ آئندہ بھی جلد از جلد ایسی سنجیدہ اجتماعات منعقد کرتے رہیں گے۔

گلاس بنانے والی ایک فیکٹری کے باہر یہ لکھا ہوا تھا۔ہمارے ہاں خوبصورت اور مضب

گلاس بنانے والی ایک فیکٹری کے باہر یہ لکھا ہوا تھا۔
ہمارے ہاں خوبصورت اور مضبوط گلاس بنتے ہیں۔ ہمارے گلاس اکیس فٹ کی بلندی سے نیچے گرائیے۔ بیس فٹ تک ضمانت ہے کہ گلاس نہیں ٹوٹے گا۔