ماں (اپنے لاڈلے بیٹے سے ) بیٹا ! جب تمہارے ابو امریکہ جائیں گے تومیں ان سے کہوں

ماں (اپنے لاڈلے بیٹے سے ) بیٹا ! جب تمہارے ابو امریکہ جائیں گے تومیں ان سے کہوں گی کہ وہاں سے ایسی چیز لائیں جو میرے بیٹے کا ہر کام کردے۔ بٹن دبایا تو جوتے پالش ،بٹن دبایا تو یونیفارم استری ، بٹن دبایا تو لحاف منہ پر ، بٹن دبایا تو بیگ کندھے پر ، اس طرح میرے بیٹے کو کوئی کام نہیں کرنا پڑے گا ‘‘۔
بیٹا۔’’لیکن امی! بٹن کون دبائے گا

ہاتھی اور چنیوٹی کالومیرج ہوا، دوسرے دن ہاتھی مر گیا۔چینوٹی بولی: واہ رے محبت

ہاتھی اور چنیوٹی کالومیرج ہوا، دوسرے دن ہاتھی مر گیا۔
چینوٹی بولی: واہ رے محبت، ایک دن کاپیار ملا، اور سار ی عمر قبر کھودنے کاکام ملا۔